گستاخِ رسول کون۔۔۔۔۔۔۔ سانوؔل عباسی

قلم کو لے کے ہاتھوں میں
یہ پہروں سوچتا ہوں میں
کہ کیا لکھوں
شرم سے ڈوب جاتا ہوں
کبھی سوچا ہے نادانو
محمد مصطفی(صلی اللہ علیہ وسلم) کی شان تو دیکھو
خدا کے وہ مقَرّب ہیں
فرشتے سر جھکاتے ہیں
مگر روتے تھے راتوں کو
وہ سجدوں میں خدا کے سامنے کیوں گڑگڑاتے تھے!

کبھی سوچا ہے نادانو!
وہ جس نے اپنے سجدوں میں
خدا سے کچھ نہیں مانگا
سِوا امّت کی بخشش کے
ہماری بہتری چاہی
مگر ہم بےوقوفوں کی طرح اپنے ہی محسن کے
بھلا بیٹھے ہیں احساں کو
انہی کا دل دکھاتے ہیں
یہ کیسے امَّتِی ہیں ہم
انہیں بدنام کرتے ہیں(نعوذبااللہ)

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے